عمران اورمودی کی سیاست ایک جیسی ہے،دونوں ناکام ہوںگے، خورشید شاہ

اسلام آباد: سابق صدر آصف زرداری و دیگر کیخلاف نیب مقدمات کی راولپنڈی منتقلی پرخورشید شاہ کا کہنا ہے کہ پیپلز پارٹی کی قیادت کو پنڈی میں نشانہ بنانا نئی بات نہیں، ماضی میں پیپلز پارٹی کی قیادت کو سولی پر چڑھایا گیا تو کبھی سرعام قتل کیا گیا، پیپلز پارٹی کو ایک بار پھر دیوار سے لگانے کی کوشش ہورہی ہے، ان ہتھکنڈروں سے پیپلزپارٹی کی جمہوری،آئینی جدوجہد دبائی نہیں جاسکتی، جھوٹے مقدمات کی نئی سیریز بھی ماضی کی طرح ناکام ہو گی۔

خورشید شاہ نے کہا کہ عمران اور مودی کی سیاست ایک جیسی ہے،عمران خان کے پاس اپوزیشن کو ٹارگٹ کرنے کے علاوہ کوئی ایجنڈا نہیں جب کہ مودی سیاسی فائدے کے لیئے سرحد پر کشیدگی بڑھارہا۔ لیکن دونوں اپنے ایجنڈے میں ناکام ہوں گے، کیونکہ  دنیا اور خطے کے حالات پاکستان میں اندرونی انتشار یا تقسیم کے متحمل نہیں۔ کٹھ پتلی عمران حکومت اپوزیشن سے انتقام کی پالیسی پر عمل پیرا ہے، لیکن دشمن کے خلاف پاکستانی قوم کو اب بھی اپوزیشن ہی متحد رکھے گی۔

دوسری جانب نیئر حسین بخاری کا کہنا ہے کہ عمران خان کے بیان سے بلی تھیلے سے باہر آگئی ہے، عمران خان مودی سے بات کر سکتے ہیں اپوزیشن سے نہیں، مودی انتخابات جیتنے اورنیازی قوم کو بےخبر رکھنے کےچکر میں ہیں، ان کا کہنا تھا کہ بھارتی پائلٹ کی عجلت میں رہائی سوالیہ نشان ہے، ملک کی نازک صورتحال کی وجہ سے صبر کر رہے تھے، لیکن عمران خان نے قومی یکجہتی کو سبوتاژ کرنے کی کوشش کی ہے۔ شدت پسندوں کے خلاف بات سے نیازی کو تکلیف ہوتی ہے، نیازی کو تکلیف ہوتی ہے تو نیب حرکت میں آتا ہے۔

Comments are closed.