گلوکار علی ظفر اور میشا شفیع کے درمیان قانونی جنگ میں تیزی

لاہور: سیشن عدالت میں گلوکار علی ظفر اور میشا شفیع کی قانونی جنگ تیزی آگئی۔عدالت پیش نہ ہونا میشا شفیع کے وکلاء کو مہنگا پڑا گیا۔عدالت نے دس ہزار روپے جرمانہ کرتے ہوئے کیس کی سماعت 17 اپریل تک ملتوی کردی۔

ایڈیشنل سیشن جج شکیل احمد نے علی ظفر کی درخواست پر سماعت کی۔عدالت کے روبرو علی ظفر کے وکلاء پیش ہوئے تایم میشا شفیع کے وکلاء عدالت میں بروقت پیش نہ ہوئے جس پر عدالت نے سخت اظہار برہمی کیا اور میشا شفیع کے وکلاء کو دس ہزار روپے جرمانہ ادا کرنے کا حکم کے دیا۔

عدالت نے آئندہ سماعت پر لاہور ہائیکورٹ کا حکم نامہ بھی پیش کرنے کا حکم دیا۔ عدالت نے کیس کی سماعت 17 اپریل تک ملتوی کرتے ہوئے میشا شفیع کے وکلا کو دوبارہ طلب کر لیا۔ درخواست گزار علی ظفر نے میشا شفیع کے خلاف ہتک عزت کا دعویٰ دائر کر رکھا ہے۔ علی ظفر کے مطابق میشا شفیع نے جھوٹی شہرت کے لئے ہراساں کرنے کے بے بنیاد الزامات عائد کئے۔

میشا شفیع کے ان جھوٹے الزامات سے پوری دنیا میں ان کی شہرت متاثر ہوئی۔ علی ظفر نے استدعا کی کہ عدالت میشا شفیع کو سو کروڑ روپے ہرجانہ ادا کرنے کا حکم دے۔ ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج لاہور نے اس کیس کا فیصلہ ایک ماہ میں کرنے کا حکم دے رکھا ہے۔

Comments are closed.