ملک میں علاج کی سہولیتیں معیاری اورآسان بنائی جائیں، وزیراعظم

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ ادویات کی قیمتیں اورعلاج معالجے کی سہولیات عام آدمی کی دسترس سے باہر نہیں ہونی چاہیئں۔ ملک میں علاج کی سہولتوں کو معیاری اورآسان بنایا جائے۔

وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت نیشنل ہیلتھ ٹاسک فورس کا اجلاس بنی گالہ اسلام آباد میں ہوا، وزیر اعظم نے ملک بھرمیں صحت کی سہولتوں اوردواؤں کی قیمتوں کا جائزہ لیا۔ اجلاس میں وزیر اعظم کو صحت کے قومی پروگرامز، ہیلتھ کارڈ اور صحت سے متعلق امور پر بریفنگ دی گئی اور دواؤں کی قیمتوں میں اضافے کے معاملے پر غور کیا گیا۔

اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ دواؤں کی قیمتیں اور علاج معالجے کی سہولتیں عام آدمی کی دسترس سے باہر نہیں ہونی چاہیئں۔ملک میں علاج کی سہولتوں کو معیاری اور آسان بنایا جائے۔ ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی حکام نے ادویات کی قیمتوں سے متعلق اٹھائے گئے اقدامات سے آگاہ کیا۔ وزیراعظم نے ڈریپ حکام کو ہدایت دی کہ ادویات کی قیمتیں مناسب سطح پر لائی جائیں ،ادویات کی قیمتوں کی شارٹ ،مڈ اور لانگ ٹرم پالیسی ہونی چاہیئے۔ پاکستان میں نرسنگ ڈویلپمنٹ پلان کے تحت شاندار نرسنگ سروس سٹرکچر بنایا جائے۔

وزیراعظم نے کہا نرسز کی اسامیاں بڑھانے کے ساتھ سکالرشپ پروگرام متعارف کرائے جائیں۔2030 ء تک پاکستان میں 10 لاکھ نرسز تیار کرنے کا ہدف رکھا جائے ، اسکولز کالجز بڑھائے جائیں۔ پاکستان سے نرسز کو بیرون ملک ملازمت اور باہر سے نرسز کو پاکستان لانے کیلیے پلان بنایا جائے۔

اجلاس میں معاون خصوصی ظفر مرزا، سیکریٹری ہیلتھ زاہد سعید اور دیگر حکام شریک ہوئے۔اجلاس میں نئے ہسپتالوں کے قیام ، پنجاب میں ڈاکٹروں کی ہڑتال پربھی غور کیا گیا۔ وزیراعظم نے ہیلتھ انشورنس کارڈ کے حوالے سے مالی اور قانونی پیچیدگی ہٹانے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہیلتھ کارڈ پورے پاکستان میں پھیلانے کے لئے پالیسی پر عملدرآمد کیاجائے۔ وزیراعظم کو ادویات کی قیمتوں ، ہیتھ کارڈ، نرسنگ ڈویلپمنٹ پلان اور بلڈ ٹرانسفیوژن پر بریفنگ دی گئی۔

Comments are closed.