4 سے6 فیصد ٹیکس ادائیگی پراثاثے ظاہر کرنے کی ایمنسٹی اسکیم کابینہ سے منظور

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت وفاقی کابینہ نے ٹیکس ایمنسٹی اسکیم کی منظوری دے دی جس کے مطابق صرف چار فیصد ٹیکس دے کر کالے دھن کو سفید کیا جاسکے گا۔ ایمنسٹی اسکیم سے فائدہ اٹھانے کیلئے 30 جون تک کی مہلت دی گئی ہے۔ حکومت نے ایمنسٹی اسکیم کی ڈیڈ لائن میں توسیع نہ کرنے کا اعلان کیا ہے۔

وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس اسلام آباد میں ہوا جس میں کالا دھن سفید کرنے کی اجازت سے متعلق ایمنسٹی اسکیم کیلئے ایسٹ ڈیکلیئریشن آرڈیننس 2019 پر بریفنگ دی گئی۔ تفصیلی غور کے بعد وفاقی کابینہ نے ایسٹ ڈیکلیئریشن آرڈیننس 2019 کی متفقہ طورپر منظوری دے دی۔ ٹیکس ایمنسٹی اسکیم کو صدارتی آرڈیننس کےذریعے نافذ کیا جائے گا۔

اسکیم کے تحت ملک اور بیرون ملک موجود رقوم اور جائیدادیں ظاہر کرنے پر 4 فیصد رقم جمع کرانی ہوگی، رقم ہر صورت میں بینکوں میں جمع کرانی ہوگی، پیسا پاکستان نہ لانے پر 6 فیصد رقم قومی خزانے میں جمع ہوگی، جائیداد کی مالیت ایف بی آر ویلیو سے ڈیڑھ گنا زیادہ تسلیم کی جائے گی اور اسکیم سے فائدہ اٹھانے والوں کیلئے ٹیکس ریٹرنز دینا لازمی ہوگا۔

اجلاس میں کابینہ کوملکی موجودہ نظام تعلیم سے متعلق بھی بریفنگ دی گئی جب کہ مدارس کوقومی دھارے میں لانے سے متعلق پیش رفت کا بھی جائزہ لیا گیا۔ وفاقی کابینہ نے چین کی جانب سے انسداد منشیات کے لیے عطیہ کردہ سامان پرڈیوٹی کی چھوٹ کے معاملہ پر بھی غور کیا اور نیشنل اسکول آف پبلک پالیسی اورمصرکے نشینل مینجمنٹ انسٹی ٹیوٹ کے درمیان مفاہمتی یادداشت کی منظوری بھی دی گئی۔

کابینہ اجلاس میں اضافی حج کوٹے جبکہ کراچی اورکوئٹہ کی خصوصی عدالت برائے انسداد منشیات کے ججوں کی تعیناتی کی بھی منظوری دی گئی۔کابینہ کی جانب سے قومی ائیرلائین کے چارٹراورائیریل ورک لائسنس کی تجدید پرغور کیا گیا اوربیرون ملک قید پاکستانیوں کو قونصلر رسائی پالیسی کے معاملہ پر بھی گفتگو کی گئی۔

Comments are closed.