پاکستان کو کشمیرسےلاتعلق کرنےکی بھارتی کوششیں ناکام ہونگی، مسعود خان

اسلام آباد: آزاد جموں و کشمیر کے صدر سردار مسعود خان نے کہا ہے کہ بھارت کشمیر سے متعلق زمینی حقائق سے نظریں چرانے کے بجائے ان کا سامنا کرے اور تنازعہ کشمیر کے مستقل اور پائیدار حل کے لیے پاکستان اور کشمیرکے عوام کے ساتھ مذاکرات کرے۔

بھارت کی پاکستان کو مقبوضہ کشمیر کی صورتحال سے لا تعلق کرنے اور کشمیر کی آبادی کے تناسب بدلنے کی کوششیں کبھی کامیاب نہیں ہوں گی۔ صدر ریاست نے مقبوضہ کشمیر کی مشترکہ مزاحمتی قیادت کی طرف سے 21 مئی کو مکمل ہڑتال اور سرینگر کے مزار شہدا تک مارچ کی کال کی مکمل حمایت کی۔

صدر آزاد کشمیر نے کہا کہ 21 مئی کو میرواعظ (شہید) اورخواجہ عبدالغنی لون شہید کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لیے لائن آف کنٹرول کے دونوں جانب کشمیری عوام بھرپور مظاہرے، جلسے جلوس، سیمینارز اور سمپوزیم منعقد کریں گے۔ کشمیری شہیدوں کی گراں قدر قربانیوں کے باعث جدوجہد کشمیر ایک ایسے موڑ میں پہنچ گئی ہے کہ اگر بھارتی سیاسی قیادت نے حقائق پر مبنی فیصلے نہ کئے تو کشمیری نوجوان مزید غیر یقینی کی کیفیت کا شکار ہو کر زندگی گزارنے کے بجائے کوئی بھی انتہائی قدم اُٹھانے پر مجبور ہو جائیں گے۔

سردار مسعود خان نے کہا کہ بھارت کے حالیہ انتخابات میں مقبوضہ کشمیر کے عوام نے بھارت کی تمام کوششوں کے باوجود جس بے مثال جرات و بہادری کا مظاہرہ کرتے ہوئے انتخابی عمل سے اظہار لاتعلقی کیا اُس کی مثال تاریخ میں نہیں ملتی۔ اُنہوں نے بھارتی قابض فوج کی طرف سے رمضان کے ماہ مقدس میں وسیع پیمانے پر نوجوانوں کی گرفتاریوں کی شدید مذمت جب کہ کشمیری نوجوانوں کی جرات اور استقلال پر اُنہیں سلام پیش کیا۔

صد ر آزاد کشمیر نے گزشتہ روز بھارتی فوج کی طرف سے مقبوضہ کشمیر کے علاقوں اسلام آباد، بانڈی پورہ، اور رام بن میں کشمیری نوجوانوں کی وسیع پیمانے پر گرفتاریوں کی بھی شدید الفاظ میں مذمت اور بے گناہ افراد کی فوری رہائی کا مطالبہ کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل جنوبی ایشیا میں امن اور عالمی سلامتی کو یقینی بنانے کے لیے دو جوہری طاقتوں کے درمیان تنازعہ کشمیر حل کرائے تاکہ خطہ کو کسی بھی ممکنہ حادثے یا تباہی سے بچایا جا سکے۔

Comments are closed.