کشمیریوں کے قتل عام کیخلاف وادی بھر میں مکمل ہڑتال

سری نگر: مقبوضہ کشمیر میں قابض بھارتی فوج کی جانب سے جاری ریاستی دہشت گردی اور قتل عام کے خلاف جمعہ کو وادی بھر میں مکمل شٹرڈاؤن ہڑتال کی گئی۔ سری نگر جامعہ مسجد میں نماز جمعہ ادا کرنے کی اجازت بھی نہیں دی گئی۔ مارکیٹیں، دکانیں اور پبلک ٹرانسپورٹ بندش سے کاروبار زندگی مفلوج رہا۔

کشمیریوں کی نسل کشی اور سرچ آپریشن کے نام پر جاری مظالم کیخلاف جمعۃ المبارک کے موقع پر عوامی احتجاج کو روکنے کیلئے قابض بھارتی فوج اور انتظامیہ کی جانب سے سری نگر میں پابندیاں عائد کی گئیں۔ تاریخی جامعہ مسجد میں نماز جمعہ کے اجتماع پر پابندی عائد کر دی، جب کہ طلبہ کے احتجاج کو روکنے کے لیے تیسرے روز بھی تمام تعلیمی اداروں میں تدریسی عمل معطل رکھا گیا۔

آل پارٹیز حریت کانفرنس کے چیئرمین سید علی گیلانی، مشترکہ مزاحمتی قیادت نے شہید نوجوان کشمیریوں کو زبردست خراج عقیدت پیش کیا ہے، الگ الگ بیانات میں حریت قائدین کا کہنا تھا کہ کشمیری نوجوان اپنے لہو سے تحریک آزادی کو جلا بخش رہے ہیں۔ کشمیری عوام کی قربانیاں جلد رنگ لائیں گی۔ بھارت طاقت کے بل بوتے پر زیادہ دیر تک کشمیر پر قابض نہیں رہ سکتا۔

دریں اثناء جموں کے ضلع ڈوڈا کے علا بھڈرواہ میں دوسرے روز بھی کرفیو نافذ رہا، ہندو انتہاء پسندوں کی جانب سے نعیم احمد شاہ کے قتل کے خلاف شدید احتجاج کے بعد گزشتہ روز علاقے میں کرفیو نافذ کیا گیا تھا۔

Comments are closed.