پاکستان گرے لسٹ سے نکلنے کا اہل ہے، ایف اے ٹی ایف کو ایکشن پلان سے آگاہ کردیا گیا

اسلام آباد/ بیجنگ: پاکستان اور فنانشل ایکشن ٹاسک فورس کے درمیان چین میں ہونے والے تین روزہ مذاکرات اختتام پذیر ہو گئے، پاکستانی حکام نے ایف اے ٹی ایف کو 10 نکاتی پلان آف ایکشن سے آگاہ کرتے ہوئے واضح کیا کہ فنانشل ایکشن ٹاسک فورس کے خدشات دور کرنے اور اہداف حصول کیلئے سنجیدہ کوششیں کی گئی، پاکستان اب میرٹ پر گرے لسٹ سے نکلنے کا اہل ہے۔

ذرائع کے مطابق یونس ڈھاگا کی سربراہی میں پاکستانی وفد نے انسداد منی لانڈرنگ و کرنسی اسمگلنگ ، دہشتگردوں کی فنڈنگ، کالعدم تنظیموں کیخلاف کارروائیوں اور دہشت گردوں کو سزاؤں سے متعلق پاکستان کے مربوط اقدامات سے ایف اے ٹی ایف کو آگاہ کیا گیا۔

پاکستانی حکام نے  بتایا کہ پاکستان نے دہشت گردوں کی فنڈنگ کا خاتمہ کر دیا ہے، بینکنگ اور نان بینکنگ سیکٹرز کو مزید فعال بنا کر دہشت گردوں کو فنڈز کی فراہمی ناممکن بنا دی ہے، موبائل بینکنگ سے بھی دہشت گردوں کی رقوم تک رسائی روکی گئی جب کہ منی لانڈرنگ کرنے والوں کے خلاف سزائیں اور جرمانے بڑھانے کا قانون تیار کیا گیا۔،

ذرائع کا کہنا ہے کہ ایف اے ٹی ایف کو اب تک اٹھائے گئے اقدامات سے آگاہ کرتے ہوئے بتایا گیا کہ انسداد منی لانڈرنگ کے لیے وفاق، صوبوں اور ضلعی انتظامیہ کے درمیان رابطے بڑھانے کے ساتھ اداروں کے درمیان تعاون کو بھی موثر بنایا گیا ہے۔

پاکستانی حکام نے بتایا کہ دہشت گردوں کے خلاف مقدمات کی سماعت میں تیزی لانے کے لیے عدالتوں کی صلاحیت بڑھائی گئی ہے جس سے مقدمات نمٹانے کی شرح میں نمایاں بہتری آئی ہے۔ اس کے علاوہ کالعدم تنظیموں ان کے سہولت کاروں کے ساتھ سخت کارروائیاں کی جا رہی ہیں۔

ذرائع کے مطابق پاکستان کی جانب سے ایف اے ٹی ایف کے خدشات میرٹ پر دور کرنے کی کوشش کی گئی ہے، جس کے بعد پاکستان گرے لسٹ سے نکلنے کا اہل ہے۔

Comments are closed.