آصف زرداری 10 روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے

اسلام آباد: احتساب عدالت نے جعلی بینک اکاؤنٹس کیس میں سابق صدر آصف علی زرداری کو دس روزہ ریمانڈ پر نیب کے حوالے کر دیا ہے۔ سابق صدر نے نیب حوالات میں اضافی سہولیات فراہمی کے لیے درخواست بھی دائر کر دی ہے۔

سابق صدر آصف علی زرداری کو سخت سیکورٹی میں اسلام آباد کی احتساب عدالت کے جج ارشد ملک کے روبرو پیش کیا گیا۔ نیب کی جانب سے جعلی بینک اکاؤنٹس کیس میں آصف زرداری کے 14 روزہ جسمانی ریمانڈ کی درخواست کی۔

نیب پراسیکیوٹر نے موقف اپنایا کہ آصف زرداری کی گرفتاری کے لئے 8 ٹھوس بنیادیں ہیں، انہوں نے جعلی اکاؤنٹس میںٹرانزیکشن کرکے غیرقانونی آمدن کو جائز کرنے کا منصوبہ بنایا اور اپنے فرنٹ مین و بے نامی داروں کے ذریعے منی لانڈرنگ کی، آصف زرداری نے بینک حکام کی معاونت سے جعلی اکاؤنٹس کھولے، پارک لین کی فرنٹ کمپنی پارتھینون کو بھی پیسے آتے رہے۔

احتساب عدالت نے دلائل سننے کے بعد آصف زرداری کو 10 روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے کرتے ہوئے ملزم سے تفتیش مکمل کر کے 21 جون کو دوبارہ پیش کرنے کا حکم دیا۔

سابق صدر آصف زرداری نے نیب حوالات میں اضافی سہولیات کی درخواست دائر کرتے ہوئے کہا کہ ذاتی خدمت گزار ساتھ رکھنے کی اجازت دی جائے اور تمام طبی سہولیات بھی مہیا کی جائیں۔

آصف زرداری کی پیشی کے موقع پر احتساب عدالت کو جانے والے تمام راستوں کو بند کردیا گیا تھا جب کہ جوڈیشل کمپلیکس کے اطراف سیکورٹی کے لیے 1500 اہلکاروافسران تعینات کیے گئے۔

Comments are closed.