شہنشاہ غزل مہدی حسن کی 7 ویں برسی، مداحوں کے دلوں میں آج بھی زندہ

کراچی: ’’شہنشاہ غزل‘‘مہدی حسن کی آج جمعرات کو 7ویں برسی منائی جارہی ہے۔ اپنی مدھر آواز کے جادو کی بدولت مہدی حسن آج بھی مداحوں کے دلوں میں زندہ ہیں۔

مہدی حسن 13جون 2012 کو انتقال کرگئے تھے۔ مہدی حسن نے40سال تک فن موسیقی کے افق پر چھائے رہے۔ مہدی حسن موسیقی کا ایک پورا عہد تھے۔ ان کے گائے راگ کو دنیا بھر میں پے پناہ شہرت ملی۔ اسی وجہ سے مہدی حسن کو ’’شہنشاہ غزل‘‘ کے خطاب سے نواز گیا۔

مہدی حسن نے 1956 میں ریڈیو پاکستان سے گائیکی کا آغاز کیاجبکہ 1962 میں پاکستانی فلم ’’شکار‘‘کے لیے پہلی مرتبہ گیت ریکارڈ کرایا۔ مہدی حسن کے گائے ہوئے گیت، غزلیں اور قومی ترانے آج بھی شائقین موسیقی کی سماعتوں میں گونج رہے ہیں۔انہوں نے 365 سے زائد فلموں میں اپنی مدھر آواز کا جادو جگایا۔فلمی صنعت میں ان کی آواز کامیابی کی ضمانت سمجھی جاتی تھی۔

چالیس برسوں تک فلم، ٹی وی اور ریڈیو میں اپنی مسحورکن آواز کا جادو جگانے والے مہدی حسن 1927 میں بھارتی ریاست راجستھان کے علاقے لونا میں پید اہوئے۔ مہدی حسن کا تعلق موسیقی کے اس بڑے گھرانے سے تھا جس کی کئی پشتیں موسیقی کی خدمت کر رہی ہیں۔

مہدی حسن نے 25 ہزار سے زائد،گیت اور غزلیں ریکارڈ کراکے ایک تاریخ رقم کی۔ شعبہ موسیقی میں غیر معمولی خدمات پر مہد ی حسن کو صدارتی تمغہ۔برائے حسن کارکردگی تمغہ امتیاز،ہلال امتیاز جبکہ بھارت میں سہگل اور نیپال میں گورکھا دک شینا باہو ایوارڈ سے نوازا گیا۔

Comments are closed.