پاکستانی قونصلرجنرل کی اسپین کے وزیر داخلہ و اعلیٰ پولیس افسران سے ملاقاتیں

رپورٹر:وسیم رزاق

بارسلونا:  اسپین میں مقیم پاکستانی برادری کو بدنام کرنے کی سازش ناکام بنانے کے لئے پاکستانی قونصلر جنرل عمران علی چوہدری متحرک ہوگئے۔ ہسپانوی وزیرداخلہ مائیکل بچ سمیت اعلیٰ حکومتی عہدیداروں سےملاقاتوں میں عمران خان علی چوہدری نے مقامی ذرائع ابلاغ میں پاکستانی کمیونٹی کیخلاف بے بنیاد خبروں پر تحفظات سے آگاہ کیا۔

پاکستانی قونصلر جنرل نے اسپین کے وزیر داخلہ مائیکل بچ، نیشنل پولیس کے دو اعلیٰ عہدیداران چیف کمشنر جون فورتن اور تفتیشی یونٹ کے سربراہ امیلیو سے بھی ملاقات کی۔ان ملاقاتوں کا مقصد 27 جون کے منشیات فروشوں کے خلاف آپریشن کی آڑ میں پاکستانی برادری کو بدنام کرنے کی سازش کو بے نقاب کرنا تھا۔ مقامی ذرائع ابلاغ میں خبریں شائع  ہوئیں جن میں کہا گیا کہ منشیات فروشی کے الزام میں گرفتار افراد میں سینکڑوں پاکستانی شامل تھے۔

پاکستانی قونصلر جنرل نے ملاقاتوں میں واضح کیا کہ جو انہوں نے تفصیلات اکٹھی کی ہیں اس کے مطابق دیگر اقوام اور ممالک سے تعلق رکھنے والے افراد بھی اس آپریشن میں گرفتار کیے گئے لیکن خبریں صرف پاکستانیوں کے خلاف چلائی گئیں، عمران علی چوہدری نے کہا کہ پاکستانی برادری اسپین کی تعمیر و ترقی میں اہم کردار ادا کر رہی ہے۔

وزیرداخلہ کا کہنا تھا کہ ان کا مقصد کبھی بھی پاکستانی کمیونٹی کو بدنام کرنا نہیں ہے۔ ذرائع ابلاغ میں شائع ہونے والی خبروں سے متعلق کچھ نہیں کہہ سکتے لیکن اسپین کی حکومت نے کبھی بھی کسی کمیونٹی کو مورد الزام نہیں ٹھہرایا ۔

قونصلر جنرل عمران علی چوہدری کا کہنا تھا کہ پاکستانی برادری محنتی، قانون کی پابند اور سپین سے محبت کرنے والی ہے ۔ان کی ان ملاقاتوں کا مقصد پاکستانی کمیونٹی کے مثبت کردار اور چہرے کو نمایاں کرنا ہے۔

انہوں نےکہا کہ وہ منشیات فروشی کے گھناؤنے کاروبار کی مذمت کرتے ہیں اور وہ منشیات کے عادی افراد کیلئے ایک "آگہی پروگرام” شروع کریں گے تاکہ لوگوں کوشعور دے کر اس لعنت سے چھٹکارا حاصل کیا جا سکے، عمران علی چوہدری نے اس سلسلے میں پاکستانی کمیونٹی کے مکمل تعاون کا یقین دلایا۔ جس پر ہسپانوی وزیرداخلہ اور نیشنل پولیس کے افسران نے انکے عزم کو سراہا۔

Comments are closed.