العزیزیہ ریفرنس میں ریلیف ملے گا یا نہیں؟ نوازشریف کو 2 ماہ انتظار کرنا پڑے گا

اسلام آباد: العزیزیہ ریفرنس میں سزا کے خلاف نوازشریف کی اپیل اور فلیگ شپ ریفرنس میں ان کی بریت کے خلاف نیب کی درخواست اسلام آباد ہائیکورٹ میں 18 ستمبر کو سماعت کےلیے مقرر کردی گئیں۔

اسلام آباد ہائی کورٹ نے العزیزیہ ریفرنس میں سزا کےخلاف نوازشریف کی اپیل 18 ستمبر کیلئے مقررکردی۔ نوازشریف نے اپنی اپیل میں موقف اختیار کررکھا ہے مرکزی اپیلوں کے فیصلے تک سزا معطل کرکے انہیں رہا کیا جائے۔ العزیزیہ ریفرنس میں احتساب عدالت کے جج ارشد ملک نے نوازشریف کو 7 سال قید کی سزا سنائی تھی۔ جب کہ نیب نے سزا کو بڑھانے کےلیے بھی اسلام آباد ہائی کورٹ میں اپیل دائر کررکھی ہے۔

فلیگ شپ ریفرنس میں نوازشریف کی بریت کے خلاف نیب کی اپیل کی سماعت بھی 18 ستمبر کو ہوگی۔ جسٹس عامر فاروق اور جسٹس محسن اختر کیانی پرمشتمل بینچ دونوں اپیلوں کی سماعت کرے گا۔

واضح رہے کہ اسلام آباد ہائی کورٹ کے اسی بینچ نے نوازشریف کی جانب سے طبی بنیادوں پر دائر درخواستوں کو 2 بار مسترد کیا۔

Comments are closed.