سلامتی کونسل کا کشمیر پر اپنی ہی قراردادوں کو نظرانداز کرنا المیہ ہے، ملیحہ لودھی

نیویارک : اقوام متحدہ میں پاکستان کی مستقل مندوب ڈاکٹر ملیحہ لودھی کا کہنا ہے کہ کشمیر کے معاملے پر اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل اپنی ہی قراردادوں کو نظر انداز کر رہی ہے،جو کہ ایک المیہ ہے۔ مقبوضہ کشمیر میں جاری کرفیو اور انسانی حقوق کی پامالیاں ختم کروائی جائیں۔

اقوام متحدہ جنرل اسمبلی میں سلامتی کونسل کی کارکردگی پر مباحثے کے دوران  ملیحہ لودھی کا کہنا تھا کہ کشمیر کے حوالے سے سلامتی کونسل کی قراردادوں پر عملدرآمد نہ ہونا المیہ ہے، جس کی قیمت کشمیری اپنے خون سے ادا کر رہے ہیں۔

پاکستانی مندوب نے کہا کہ مسئلہ کشمیرحل نہ ہونے کے ساتھ مسلسل بھارتی بربریت، سلامتی کونسل کی قراردادوں پر عدم عملدرآمد کی واضح نشانی ہے، سلامتی کونسل کا اپنی ہی قراردادوں کو نظر انداز کرنے کا طرز عمل ادارے کی ساکھ پر سوالیہ نشان ہے۔

ملیحہ لودھی کا کہنا تھا کہ بھارت نے 5 اگست کو کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کر کے صریحاً غاصبانہ اقدام کیا، مقبوضہ جموں وکشمیر میں انسانیت سوز مظالم اور بربریت کا خاتمہ ناگزیر ہے، سلامتی کونسل مقبوضہ کشمیر میں جاری کرفیو، تالا بندی ختم، جبری گرفتاریاں، پیلٹ گنز کا استعمال اور انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیاں بند کرائے۔

Comments are closed.