آزادی مارچ سے روکا گیا تو پیپلز پارٹی اپنے لائحہ عمل پر غور کرے گی، بلاول بھٹو

راولپنڈی: چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری کا کہنا ہے کہ حکومت کی نااہلی اور ناقص پالیسیوں کی وجہ سے ملک انارکی کی طرف جا رہا ہے، اگر مولانا کو احتجاج کے آئینی حق سے روکا گیا تو پیپلز پارٹی اپنے لائحہ عمل پرغور کرے گی۔

راولپنڈی کی اڈیالہ جیل میں اپنے والد آصف علی زرداری کے ساتھ ملاقات کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ آصف زرداری کو طبی سہولیات فراہم نہیں کی جا رہیں، سابق صدر کی صحت پر پیپلز پارٹی اور خاندان کو تشویش ہے۔ سابق صدر کو فوری طور پر طبی سہولیات فراہم کر کے اسپتال منتقل کیا جائے۔

چیئرمین پیپلز پارٹی نے الزام عائد کیا کہ آصف زرداری کو استعمال کرکے خاندان پر دباؤ ڈالا جا رہا ہے۔ ملزم اور کیس سندھ کا ہے لیکن اس کی انکوائری راولپنڈی میں ہو رہی ہے۔ ہم انسانی حقوق کا مطالبہ کر رہے ہیں، امید ہے عدالتی نظام انصاف ضرور دلوائے گا۔ صدر زرداری بیمار ضرور لیکن حوصلہ بلند ہے، وہ ہر ظلم برداشت کرنے کیلئے تیار ہیں۔

ملک کی سیاسی صورتحال پر بات کرتے ہوئے بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ مولانا فضل الرحمان کے آزادی مارچ کو اخلاقی حمایت کرتے ہیں۔ ان کے ساتھ ایک بات پر اتفاق ہے کہ عمران خان کو جانا پڑے گا۔ اگر مولانا کو احتجاج کے آئینی حق سے روکا گیا تو پیپلز پارٹی اپنے لائحہ عمل پرغور کرے گی۔

ان کا کہنا تھا کہ عوام کی زندگی مہنگائی سے تنگ ہو گئی ہے۔ کوئی ایک سیاسی جماعت عوامی مسائل حل نہیں کر سکتی۔ اپوزیشن جماعتوں کو پیغام دیتا ہوں کہ ہم ایسے کارڈز کھیلیں جس سے تھرڈ پارٹی کو آنے کا موقع نہ ملے کیونکہ ٹوٹی پھوٹی جمہوریت بھی آمریت سے بہتر ہوتی ہے۔

Comments are closed.