یونیورسٹی آف پونچھ میں گلگت بلتستان کے طلبہ کیلئے مختص نشستیں دو گنا کر دی گئیں

سردار عمران اعظم

اسلام آباد: گلگت بلتستان حکومت کے مطالبہ پر آزاد کشمیر کی پانچ سرکاری جامعات میں گلگت بلتستان کے طلبہ کے لئے مختص نشستوں میں اضافہ کے فیصلے پر عملدرآمد شروع کر دیا گیا، یونیورسٹی آف پونچھ میں گلگت بلتستان کے طلبہ کا کوٹہ دوگنا کر دیا گیا ہے۔

 آزاد جموں وکشمیر کے صدر سردار مسعود خان کی صدارت میں یونیورسٹی آف پونچھ راولاکوٹ کی سینٹ کے بارہویں اجلاس کی منظوری کے بعد جاری ہونے والے ایک نوٹیفکیشن کے مطابق جامعہ پونچھ میں گلگت بلتستان کے طلبہ کے لئے مختص 38نشستوں کو بڑھا کر 73کر دیا گیا ہے جبکہ دیگر چار جامعات میں بھی اسی طرز کا اضافہ کیا جا رہا ہے۔

بڑھائی جانے والی نشستوں میں بیچلر پروگراموں کے لئے 18نشستوں اور ماسٹر پروگراموں کے لئے 13مزید نشستوں کا اضافہ کیا گیا ہے جبکہ آزاد ریاست کی حکومت نے گلگت بلتستان کے طلبہ کو آزادکشمیر کے تعلیمی اداروں میں مقامی طلبہ کے مساوی دیگر سہولتیں دینے اور ان کی بہبود کے لئے کئی دیگر اقدامات کرنے کے عزم کا اظہار کیا ہے۔

واضح رہے کہ رواں برس اگست میں گورنر گلگت بلتستان راجہ جلال حسین مقپون اور وزیر اعلیٰ حافظ حفیظ الرحمان نے آزاد جموں وکشمیر کے صدر سردار مسعود خان سے ملاقات کر کے ان سے آزادکشمیر کے اعلیٰ تعلیمی اداروں میں جی بی کے طلبہ کے لئے مختص نشستوں میں اضافہ کا مطالبہ کیا تھا جس کے تسلسل میں یونیورسٹی پونچھ نے جی بی کے طلبہ کے لئے مختص نشستوں میں سو فیصد اضافہ کیا ہے۔

آزاد جموں وکشمیر کے صدر سردار مسعود خان نے کہا ہے کہ گلگت بلتستان کے طلبہ ہمارے جسم و جان کا حصہ ہیں جنہیں ہم اپنے سے جدا نہیں سمجھتے ہیں۔ آزادکشمیر کے تعلیمی اداروں میں جی بی طلبہ کے لئے مختص نشستوں میں اضافہ ہماری طرف سے ایک معمولی تحفہ ہے۔

یونیورسٹی آف پونچھ کے سینٹ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے صدر آزادکشمیر نے ریاست میں میعار تعلیم کو مزید بہتر بنانے اور جامعات میں تحقیق اور ریسرچ کے کلچر کو فروغ دینے کی ضرورت پر زور دیا ان کا کہنا تھا کہ ہمیں ریاست کو معاشی ترقی کی راہ پر ڈالنے اور تعلیمی ترقی کے لئے اپنی توانائیوں کو مجتمع کرنا ہو گا۔

انہوں نے یونیورسٹی آف پونچھ میں بنیادی ڈھانچے کی تعمیر اور جامعہ میں اہم قومی اور تعلیمی اہمیت کے حامل موضوعات سیمینارز، بین الاقوامی کانفرنسز منعقد کرنے اور یونیورسٹی کامیاب کانوووکیشن منعقد کرنے پر جامعہ کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر محمد رسول جان اور ان کی ٹیم کو مبارکباد دی اور اس توقع کا اظہار کیا کہ ان کی قیادت میں جامعہ مزید ترقی کی منزلیں طے کرے گی۔

سینٹ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے جامعہ پونچھ کے وائس چانسلرنے بتایا کہ یونیورسٹی کے منگ کیمپس کے لئے پچاس کنال اراضی حاصل کر لی گئی ہے جہاں انگریزی زبان کا شعبہ پہلے ہی قائم کیا جا چکا ہے جبکہ یونیورسٹی کے راولاکوٹ کیمپس میں ایجوکیشن، ہوٹل مینجمنٹ اور مہمان نوازی جیسے نئے شعبہ جات جلد شروع کئے جائیں گے۔ جامعہ کے عباسپور، چھوٹا گلہ اور کہوٹہ کیمپسز کے مسائل اور مشکلات کو دور کر کے ان کیمپسز کو جلد از جلد قائم کرنے پر توجہ مرکوز ہے۔

جامعہ پونچھ کے وی سی  کا کہنا تھا کہ عباسپور کیمپس میں داخلہ کے خواہشمند طلبہ کی ایک بڑی تعداد نے اس سال داخلے کے لئے درخواستیں جمع کروائی ہیں جن میں گزشتہ سال کی نسبت کئی گنا اضافہ ہوا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جامعہ نے تعیناتیوں ، تقرریوں اور ترقیابیوں کے لئے ایک صاف وشفاف نظام متعارف کرایا ہے جس سے فیکلٹی ممبران میں یونیورسٹی کے نظام پر اعتماد بڑھا ہے۔

Comments are closed.