وفاقی وزیر فواد چوہدری وزیراعلیٰ عثمان بزدار اور صوبائی حکومت کی کارکردگی پر برس پڑے

اسلام آباد: وفاقی وزیرسائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چوہدری وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار اور صوبائی حکومت کی کارکردگی پر برس پڑے، پارٹی اجلاس کے دوران سخت تنقید کرتے ہوئے فواد چوہدری نے کہا کہ پنجاب ڈلیور نہیں کر پا رہا جس کے باعث تحریک انصاف کو مجموعی طور پر دباؤ کا سامنا ہے۔

وزیراعظم عمران خان کو بھجوائے گئے خط میں وفاقی وزیرسائنس اینڈ ٹیکنالوجی فوادچوہدری نے اہم معاملات پر نوٹس لینے کی اپیل کی ہے۔ فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ صوبے مسلسل آئین کے آرٹیکل 140 کی خلاف ورزی کررہے ہیں۔اضلاع کی سطح پرفنڈز کی منتقلی نہیں کی جارہی۔ بدقسمتی سے تحریک انصاف کی حکومت نے بھی صوبائی فنانس کمیشن ایوارڈ کا ابھی تک اعلان نہیں کیا۔

فواد چوہدری نے خط میں آئین کے آرٹیکل 140 اے کا حوالہ دیتے ہوئے لکھا ہے کہ ہر صوبہ آرٹیکل 140 اے کے تحت لوکل گورنمنٹ سسٹم، سیاسی، انتظامی اورمالی ذمہ داریاں مقامی حکومتوں کومنتقل کرنے کا پابند ہے لیکن صوبے مسلسل آئین کے آرٹیکل 140 کی خلاف ورزی کررہے ہیں۔ اضلاع کی سطح پر فنڈز کی منتقلی نہیں کی جارہی۔

خط میں کہا گیا ہے کہ شہبازشریف نے اپنے دور حکومت میں صوبائی فنانس کمیشن ایوارڈ نہیں دیا۔ شہباز شریف نے آرٹیکل 140 کی صریحا خلاف ورزی کی لیکن بدقسمتی سے تحریک انصاف کی حکومت بھی صوبائی فنانس کمیشن ایوارڈ کا ابھی تک اعلان نہ کر کے سابقہ حکومت کے نقش قدم پر چل پڑی ہے۔

فواد چودھری نے خط میں لکھا کہ آرٹیکل 140 اے پر عملدرآمد نہ ہونے کے باعث اضلاع کو ان کا صحیح حصہ نہیں مل رہا جس کی وجہ سے ضلعی سطح پر مسائل بڑھ رہے ہیں۔ انہوں نے وزیراعظم کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ وہ (عمران خان) ہمیشہ سے مضبوط بلدیاتی نظام پر زور دیتے رہے ہیں لیکن یہ اس وقت تک ممکن نہیں جب تک صوبائی فنانس کمیشن ایوارڈ کا اجرا نہیں ہوگا۔

وفاقی وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی نے وزیراعظم سے اپیل کی ہے کہ وہ آرٹیکل 140 کی خلاف ورزی کا نوٹس لیں اور صوبوں بالخصوص پنجاب کو صوبائی فنانس کمیشن ایوارڈ کرنے کا حکم دیں۔ دریں اثناء سماجی رابطوں کی ویب سائٹ پر جاری اپنے بیان میں فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ وزرائے اعلیٰ کے پاس صوابدیدی فنڈ آرٹیکل 140 اے کی خلاف ورزی ہے۔

اپنی بات جاری رکھتے ہوئے فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ صوبائی وزرائے اعلیٰ خود کو بادشاہ سمجھتے ہیں، جس طرح فارمولے کے تحت فنڈز وفاق صوبوں میں تقسیم کرتا ہے اسی طرح صوبائی سطح پر اضلاع میں فنڈز تقسیم ہونے چاہئیں۔ مسئلہ پنجاب حکومت کا نہیں وسائل کی تقسیم کا ہے۔

Comments are closed.