ایم کیو ایم عمران خان کو بھائی سمجھتی ہے،حکومت نہیں گرائے گی، بیرسٹر فروغ نسیم

اسلام آباد: وفاقی وزیرقانون بیرسٹر فروغ نسیم ایم کیو ایم کی جانب سے حکومت گرانے کے امکانات کو رد کر دیا ہے، ان کا کہنا ہے کہ متحدہ قومی موومنٹ پاکستان (ایم کیو ایم) وزیراعظم عمران خان کو اپنا بھائی سمجھتی ہے وہ کسی صورت حکومت نہیں گرنے دیں گی۔

سینئرصحافی عدیل وڑائچ کے ساتھ خصوصی بات چیت کے دوران وفاقی وزیرقانون فروغ نسیم نے انکشاف کیا ان کو وزارت وزیراعظم عمران خان نے خود دی، وزارت قانون کے علاوہ دو وزارتیں دینے کا وعدہ کیا گیا تھا۔ فروغ نسیم نے کہا کہ وزیراعظم کی پیشکش پر خالد مقبول صدیقی سے مشورہ کیا تو انہوں نے کہا کہ آپ عمران خان کی خواہش کا احترام کرتے ہوئے وزارت کی پیشکش قبول کریں، دو وزارتوں کا معاملہ تحریک انصاف اور ایم کیو ایم کا ہے۔

ایک سوال کے جواب میں وفاقی وزیر قانون نے امید ظاہر کی کہ حکومت ناراض ایم کیو ایم کو منا لے گی اور ان کے مطالبات جن میں دو وزارتیں اور کراچی کے فنڈز کی فراہمی شامل ہیں انہیں پورا کر دیا جائے گا۔ پیپلز پارٹی کی پیشکش یا کسی اور وجہ سے حکومت گرانے کے امکانات سے متعلق سوال پر فروغ نسیم نے کہا کہ ایم کیو ایم عمران خان کو بھائی سمجھتی ہے وہ کسی صورتحال تحریک انصاف کی حکومت گرنے نہیں دے گی۔

سوشل میڈیا پر پابندیوں کے حوالے سے وفاقی وزیرقانون کا کہنا تھا کہ اس حوالے سے کوئی کالا قانون نہیں لایا جا رہا، سائبرکرائمز ایکٹ کے بعد قواعد تیار نہیں ہوئے تھے، سوشل میڈیا سے متعلق ایسے رولز بنا رہے ہیں جو عالمی سطح پر رائج ہیں، فیس بک وفد کو بتایا کہ بھارت کے مقابلے پاکستان سے امتیازی رویہ نہ برتا جائے۔

آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع سے متعلق آرڈیننس اور نوٹیفکیشن اجراء میں غلطیوں کے حوالے سے بیرسٹر فروغ نسیم نے کہا کہ یہ کام وزارت دفاع کا ہے، وہی سمری تیار کرتی ہے اور منظوری کے لئے وزیراعظم کو بھجوائی جاتی ہے، سابق چیف جسٹس آف پاکستان آصف سعید کھوسہ کی جانب سے وزارت قانون میں بیٹھے افسران کی ڈگریاں چیک کرانے سے متعلق ریمارکس پر وفاقی وزیر نے کہا کہ معلوم نہیں آصف سعید کھوسہ نے یہ رولز کہاں پڑھے کہ آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع کا نوٹیفکیشن وزارت قانون کا کام ہے۔

Comments are closed.