امریکی نائب معاون وزیر خارجہ ایلس ویلز 4 روزہ دورے پر پاکستان پہنچ گئیں

اسلام آباد: امریکا کی پرنسپل ڈپٹی اسسٹنٹ سیکرٹری برائے جنوبی اور وسطی ایشیائی امور ایلس ویلز سری لنکا اور بھارت کے بعد 4 روزہ دورے پر پاکستان پہنچ گئیں۔

امریکی نائب معاون وزیرخارجہ ایلس ویلز ابوظہبی سے اسلام آباد ایئرپورٹ پہنچیں جہاں پاکستانی دفتر خارجہ اور امریکی سفارتخانے کے اعلیٰ حکام نے ان کا استقبال کیا۔ ایلس ویلز 19 سے 22 جنوری تک پاکستان کا دورہ کریں گی۔

امریکی نائب معاون وزیرخارجہ اپنے دورے کے دوران وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی سے ملاقات کریں گی، اس کے ساتھ ساتھ ایلس ویلز کی وزیراعظم عمران خان اور آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے بھی ملاقاتیں متوقع ہیں۔ جن میں پاک امریکا دوطرفہ تعلقات، افغان امن عمل سمیت علاقائی امورپر بات چیت کی جائے گی۔

ذرائع کے مطابق امریکی نائب معاون وزیر خارجہ پاکستانی حکام سے ملاقاتوں میں حالیہ ایران امریکا کشیدگی اور افغانستان میں جاری مفاہمتی عمل و امن مذاکرات کے حوالے سے بھی بات چیت کریں گی۔ اس کے ساتھ ساتھ امریکا کی پاکستان کو فوجی امداد و تربیت کے معاملات بھی زیرغور آنے کا امکان ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ پاکستانی قیادت ان ملاقاتوں میں مسئلہ جموں وکشمیر اور مقبوضہ خطے میں بھارت کے غاصبانہ اقدامات کا معاملہ اٹھائے گی،مقبوضہ وادی میں نہتے کشمیری عوام پر مظالم اور انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں کو اجاگر کرنے کے ساتھ ساتھ پانچ اگست سے جاری مسلسل لاک ڈاؤن کے خامتے کیلئے زور دیا جائے گا۔

امریکا کی پرنسپل ڈپٹی اسسٹنٹ سیکرٹری برائے جنوبی اور وسطی ایشیائی امور ایلس ویلز اپنے دورے کے دوران دفتر خارجہ اسلام آباد میں تجارت، خزانہ اور داخلہ کی وارتوں کے سینئر حکام اور سول سوسائٹی کے نمائندگان سے ملاقاتیں کریں گی۔ جن میں مختلف شعبوں میں دوطرفہ تعاون کے فروغ پر بات چیت کی جائے گی۔

خیال رہے کہ ایلس ویلز جنوبی ایشیا کے دورے میں پہلے مرحلے میں 13 جنوری کو سری لنکا پہنچی تھیں جس کے بعد 15 جنوری کو بھارت کے دورے پر آگئی تھیں۔اس سے قبل ایلس ویلز نے گزشتہ برس اپریل میں امریکا کے نمائندہ خصوصی برائے افغان مفاہمتی عمل زلمے خلیل زاد کے ہمراہ اسلام آباد کا دورہ کیا تھا۔

Comments are closed.