آٹا بحران شدت اختیار گیا، عوام یریشان۔۔ نانبائیوں کا روٹی قیمت بڑھانے کا عندیہ

اسلام آباد: ملک بھر میں آٹے کا بحران شدت اختیار کر گیا ہے، مختلف علاقوں میں آٹا 70 روپے فی کلو تک فروخت ہونے سے غریب عوام کو دو وقت کی روٹی کے لالے پڑ گئے ۔ آٹے بحران کے بعد نانبائی ایسوسی ایشن نے بھی قیمتوں میں اضافے کا عندیہ دے دیا۔

ملک بھر کی طرح لاہور میں بھی آٹا نایاب ہے۔ بیس کلو آٹے کے تھیلے کی قیمت 1100 روپے تک جا پہنچی ہے۔ ناجائز منافع خوروں نے بحران کا فائدہ اٹھاتے ہوئے گندم ذخیرہ کرلی ہے جب کہ چکیوں پر آٹا 70 روپے کلو میں فروخت کیا جا رہا ہے عام مارکیٹ سے معیاری آٹا بھی نایاب ہو چکا ہے۔

دوسری جانب وزیرخوراک پنجاب سمیع اللہ خان نے دعویٰ کیا ہے کہ کہیں بھی آٹے کا بحران نہیں،صوبائی حکومت اب تک گراں فروشوں کے خلاف 14 کروڑ کے جرمانے کر چکی ہے۔ ادھرڈپٹی کمشنر لاہور دانش افضال کا کہنا تھا کہ شہر میں جہاں جہاں آٹا بحران کی شکایات ہیں، وہاں آٹا پہنچا دیا گیا ہے۔ کنٹرول ریٹ پر گندم کی فراہمی کے باوجود چکی پر آٹے کی قیمت 70 روپے سے کم نہ ہوئی تو کارروائی کریں گے۔

مارکیٹ ذرائع کے مطابق گندم کی قلت کے علاوہ قیمت کے بڑھنے میں بڑے پیمانے پر ذخیرہ اندوزوں کا بھی ہاتھ شامل ہے جس کے خلاف اب تک کوئی کارروائی نہیں کی گئی۔ دکانداروں کے مطابق آٹے کی طلب زیادہ مگر سپلائی انتہائی کم ہے۔ گزشتہ تین ماہ کے دوران سندھ میں گندم کی 100 کلو والی بوری کی قیمت 1300 روپے اضافے سے 5 ہزار300 روپے تک پہنچ چکی ہے۔

سندھ کے وزیرخوراک اسماعیل راہو نے فردوس عاشق اعوان کے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ صوبائی حکومت کے پاس پیسوں کی کمی تھی، وفاق نے فنڈز نہیں دیئے، وہ اپنی نااہلی چھپانے کیلئے سارا ملبہ سندھ حکومت پر ڈال رہی ہے۔

دوسری جانب کوئٹہ سمیت بلوچستان کے دیگر علاقوں میں آٹے کا بحران مزید شدت اختیار کر گیا ہے۔ مارکیٹ میں 20 کلوآٹے کی قیمت گیارہ سو بیس روپے تک پہنچ گئی ہے۔ شہر کے یوٹیلیٹی سٹورز سے آٹا بھی غائب ہوگیا ہے۔ فلور ملز کی جانب سے ضرورت کے مطابق آٹا مہیا نہیں کیا جا رہا ہے،جس کی وجہ سے مارکیٹ میں آٹے کی ترسیل نہیں ہو پا رہی ہے۔

آٹے کی بڑھتی ہوئی قیمتوں کے باعث تندور مالکان نے بھی روٹی کا وزن کم کرنے اور قیمتیں بڑھنے کا عندیہ دے دیا ہے۔ خیبر پختونخوا حکومت کی جانب سے پنجاب حکومت سے رابطے کے بعد آٹے کی ترسیل شروع ہو گئی ہے جس کے بعد قیمتوں میں تو کسی حد تک کمی ہوئی لیکن نانبائیوں نے روٹی کی قیمت میں اضافے کا عندیہ دے دیا ہے۔

Comments are closed.