ایک ترک فوجی بھی زخمی ہوا توشامی فوج کو کہیں بھی نشانہ بنائیں گے، طیب اردوان

انقرہ: ترک صدر رجب طیب اردوان نے دو ٹوک الفاظ میں کہا ہے کہ اگر ایک بھی ترک فوجی زخمی ہوا تو شامی افواج کو کہیں بھی نشانہ بنانے سے گریز نہیں کریں گے۔

ترک پارلیمنٹ سے خطاب کرتے ہوئے صدر رجب طیب اردوان نے کہا کہ اب اگر ایک بھی ترک فوجی کو نقصان پہنچا تو شامی افواج کو کہیں بھی نشانہ بنانے سے گریز نہیں کریں گے اور ضرورت پڑنے پر فضائی حملے بھی کیے جائیں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ ترکی ادلب میں شامی افواج کی پیش قدمی ترکش آبزرویشن پوسٹ سے پیچھے دھکیلنے کے لیے پرعزم ہے اور یہ کام فروری کے آخرتک کسی بھی صورت میں سرانجام دیا جائے گا۔

ترکی نے باغیوں کے علاقے میں صورتحال پر نظر رکھنے کے لیے 12 کے قریب ملٹری پوسٹ قائم کی ہیں جب کہ رواں ماہ کے شروع میں ہزاروں ترک فوجیوں سمیت اسلحہ، ٹینکس، راڈار اور دیگر فوجی سامان کو ادلب میں منتقل کیا گیا تھا۔

واضح رہے کہ رواں ماہ کے اوائل میں شامی حکومت کے حملے میں 13 ترک فوجی مارے گئے تھے جس کے بعد ترک صدر نے اپنے بیان میں کہا تھا کہ شامی حکومت کو اس حملے کی قیمت ادا کرنی پڑے گی۔

Comments are closed.