ملک میں تعلیمی اصلاحات کیلئے پاکستان نیشنل ایجوکیشن پلان 2020 کابینہ سے منظور

اسلام آباد: وفاقی کابینہ نے ملک میں تعلیمی اصلاحات کے منصوبے ‘پاکستان نیشنل ایجوکیشن پلان 2020’ کی منظوری دے دی ہے۔

وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت وفاقی کابینہ کے اجلاس میں وزیر تعلیم و تربیت شفقت محمود نے پاکستان نیشنل ایجوکیشن پلان 2020 کا مسودہ منظوری کے لئے پیش کیا۔ کابینہ نے تفصیلی غور کے بعد تعلیمی اصلاحات کے اس پلان کی منظوری دے دی ہے۔

اس حوالے سے حکومتی ترجمان فردوس عاشق اعوان کا کہنا ہے کہ پی ٹی آئی نے وعدہ کیا تھا کہ تعلیمی شعبے میں انقلابی اقدامات کرتے ہوئے دو نہیں ایک پاکستان کے تحت یکساں نصاب کو یقینی بنائیں گے اور ایک پالیسی کے تحت پاکستان میں اسکولوں سے باہرموجود 2 کروڑ 20 لاکھ بچوں کو اسکولوں میں لایا جائے گا جس میں 1ایک کروڑ بچیاں شامل ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان نیشنل ایجوکیشن پلان 2020 کا مقصد ملک میں یکساں نصاب کا نفاذ، دینی تعلیم کو مرکزی تعلمی نظام میں شامل کرنا، اسکولوں سے باہر بچوں کو اسکولوں میں لانا، تعلیم بالغاں کو یقینی بنانا، ہنر سب کے لئے کے عزم کو مضبوط کرنا اور اعلیٰ تعلیم اور یونیورسٹی کے اندر آرٹیفیشل انٹیلی جنس جیسے مضامین کا شامل کرنا ہے۔

اسلام آباد میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے حکومتی ترجمان کا کہنا تھا کہ وفاقی کابینہ کو بتایا گیا کہ گریڈ ایک سے 5 تک کے نصاب کو قومی نصاب کونسل کو منظوری کے لیے بھجوا دیا گیاہے،چھٹی سے آٹھویں جماعت کا نصاب 2020 تک تیار کرلیا گیا ہے اور تعلیم کے حوالے سے قومی کانفرنس کا انعقاد مارچ میں کیا جارہا ہے جس میں اس نصاب کی باضابطہ منظوری لی جائے گی۔

وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات نے بتایا کہ بینظیر بھٹو انٹرنیشنل ایئرپورٹ کے اطراف میں کثیرالمنزلہ عمارات کی اونچائی کی حد کا تعین کیا گیا اور منظوری دی گئی تاکہ تعمیراتی شعبے میں بہتری آئی اور دستیاب مواقع کو استعمال کیا جائے گا۔

کابینہ اجلاس کے فیصلوں سے متعلق فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ سید محمد علی شاہ بطور پاکستان کمشنر انڈس واٹر کی تین ماہ کی توسیع کی منظوری دے دی ہے ، دیامر بھاشا ڈیم کی حفاظت پر مامور واپڈا سیکیورٹی فورس کے اہلکاروں کے ساتھ ساتھ سردار اختر مینگل اور ڈاکٹرجہاںزیب جمال دینی کو بھی ممنوع بورکے اسلحے کے لائسنس  جاری کی منظوری دی گئی۔

انہوں نے بتایا کہ اسکندر خان کی ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج اسپیشل کورٹ اسلام اباد تعیناتی اور اقتصادی رابطہ کمیٹی کے 19 فروری کے فیصلوں کی توثیق کی۔ کابینہ اجلاس کے ایجنڈا نمبر 13 میں صحافیوں اور میڈیا سے وابستہ افراد کے تحفظ کے بل کی اصولی منظوری دی گئی ہے جس میں تحفظ اور سلامتی اور دہشت گردی اور لائف انشورنس پر تشویش تھی اس حوالے سے ایک ہی بل تھا جس پر انسانی حقوق اور وزارت اطلاعات و نشریات دونوں کام کررہے تھے اس کو کو یکجا کرکے اصولی منظوری دی گئی ہے۔

Comments are closed.