مقبوضہ کشمیرابتدا تھی،اب بھارت کے 20 کروڑمسلمانوں کو نشانہ بنایاجارہا ہے، وزیراعظم

اسلام آباد: وزیر اعظم عمران خان نے بھارتی دارالحکومت نئی دہلی میں جاری مسلم کش فسادات پر اپنے رد عمل میں کہا ہے کہ جب بھی کہیں نسل پرستانہ نظریہ غالب آتا ہے، تباہی کا باعث بنتا ہے، مقبوضہ جموں کشمیر ابتدا تھی اوراب بھارت کے 20 کروڑ مسلمانوں کو نشانہ بنایا جارہا ہے۔

سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری اپنے بیان میں وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ آج ہم دیکھ رہے ہیں کہ ایک ارب سے زائد آبادی والے ایٹمی ملک بھارت میں نازی فلسفے سے متاثر ہندو انتہا پسند تنظیم  راشٹریہ سیوک سنگھ (آر ایس ایس) نے اقتدار سنبھال لیا ہے اور جب بھی نفرت پر مبنی نسل پرستانہ نظریہ اقتدار سنبھالتا ہے تو وہ ملک میں خونریزی کا باعث بنتا ہے۔

عمران خان کا کہنا ہے کہ میں نے گزشتہ برس اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سے خطاب کے دوران یہ پیش گوئی کر دی تھی کہ ایک بار یہ جن بوتل سے باہر آگیا تو خون خرابہ اور بڑھ جائے گا۔ مقبوضہ کشمیر میں شروعات تھی۔ اب ہندوستان میں 20 کروڑ مسلمانوں کو نشانہ بنایا جارہا ہے۔ عالمی برادری کو اب عمل کرنا چاہئے، عالمی برادری بھارت کی صورتحال پر لازمی ایکشن لے۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ وہ بتادینا چاہتے ہیں کہ ہماری اقلیتیں اس ملک کے برابر کے شہری ہیں۔ پاکستان میں غیر مسلم شہریوں یا ان کی عبادت گاہوں کو نشانہ بنانے والوں کے ساتھ  سختی سے نمٹا جائے گا۔

Comments are closed.