پاکستان کی افغانستان میں سکھوں کی عبادت گاہ پر دہشتگرد حملے کی شدید مذمت

اسلام آباد: پاکستان نے افغانستان کے دارالحکومت کابل میں سکھوں کی مذہبی عبادت گاہ پر دہشت گرد حملے کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ عائشہ فاروقی کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ عبادت گاہوں پر حملے کا کوئی سیاسی اور مذہبی جواز نہیں، پاکستان ہر قسم کی دہشت گردی کی مذمت کرتا ہے۔انہوں نے کہا کہ عبادت کی تمام جگہیں مقدس ہیں، عبادتگاہوں کا تحفظ ہرصورت میں یقینی بنایا جائے، متاثرہ افراد کے اہل خانہ سے دلی تعزیت کرتے ہیں۔

واضح ہے کہ افغانستان کے دارالحکومت کابل میں سکھوں کی عبادت گاہ گوردوارہ پر دہشت گردوں کے حملے میں 25 شہری ہلاک جبکہ 8 زخمی ہوئے تھے۔سکیورٹی فورسز نے بروقت کارروائی کے بعد ایک حملہ آور ہلاک کر کے 80 افراد کو بازیاب کرا لیا تھا۔

دریں اثناء طالبان ترجمان کی جانب سے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ پر جاری ایک بیان میں سکھوں کی عبادت گاہ پر کیے گئے حملے سے لاتعلقی کا اظہار کیا تھا۔ جب کہ حملے کی ذمہ داری شدت پسند تنظیم داعش نے قبول کرلی ہے۔

Comments are closed.