وزیراعظم کا رویہ کورونا کیخلاف جنگ میں ہتھیار ڈالنے کے مترادف ہے، شہباز شریف

اسلام آباد: پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر اورقائد حزب اختلاف شہباز شریف کا کہنا ہے کہ ضروری طبی سامان اور حکمت عملی کا فقدان کورونا وائرس کی راہ ہموار کر رہا ہے، وزیراعظم کا رویہ عالمی وباء کیخلاف جنگ میں ہتھیار ڈالنے کے مترادف ہے۔

 شہبازشریف نے کہا ہے کہ حقائق چھپانے سے کورونا کی پھیلتی وبا نہیں رک سکتی ہے، مسئلے کا حل بڑے پیمانے پر ٹیسٹنگ اور اسپتالوں سے الگ قرنطینہ سینٹرز کا قیام ہے۔ وینٹی لیٹرز کی کمی کے علاوہ انہیں چلانے کے لئے متعلقہ عملے کی بھی شدیدقلت ہے۔

 ان کا کہنا ہے کہ حکومت موثر حکمت عملی، ضروری حفاظتی سامان فراہم نہ کرکے کورونا پھیلانے کی راہ ہموار کر رہی ہے، وزیراعظم عمران خان کا رویہ کورونا کے خلاف جنگ میں ہتھیار ڈالنے کے مترادف ہے، ڈاکٹرز، نرسز اور پیرا میڈیکل سٹاف کی تربیت نہ ہونا مزید خطرے کی علامت ہے۔

اپوزیشن لیڈر نے مزید کہا کہ حکومت ابھی تک پاکستان میں ٹیسٹ اور سکریننگ کا صحیح ڈیٹا نہیں بتا رہی، حکومت کم افراد کے ٹیسٹ کر کے حالات اور مریضوں کی تعداد کو قابو میں رکھنے کی ناکام کوشش کر رہی ہے، جس سے وائرس کا خوفناک حد تک پھیلنے کا خدشہ ہے۔

شہباز شریف نے مزید کہا ہے کہ اسپتالوں میں مریضوں کو کورونا کے متاثرین سے فی الفور الگ کیا جائے ورنہ بڑی تباہی ہوگی، پنجاب میں ہنگامی بنیادون پر الگ قرنطینہ مراکزکے قیام کو اولین ترجیح دی جائے اس مقصد کے لئے سرکاری سکول، کالج، ہوٹل، شادی ہال اور مساجد کو استعمال کیا جا سکتا ہے۔

صدر مسلم لیگ (ن) کا کہنا ہے کہ دور افتادہ علاقوں سمیت ضلع و تحصیل کی سطح پر کورونا وائرس کی روک تھام کے حوالے سے عوام میں ہنگامی مہم چلائی جائے، کورونا سے متاثرہ مریضوں کے علاج معالجہ کے لئے انتظامات کئے جائی اور وباء سے متاثرہ مریضوں کے دیکھ بھال کرنے والے ڈاکٹرز و نرسز کے بھی باقاعدگی سے ٹیسٹ کرائے جائیں۔

Comments are closed.