پاکستانی تعلیمی ادارے 15 ستمبر سے کھولنے کا اعلان، ملتوی امتحانات لینے کی اجازت

اسلام آباد: بچوں کی تعلیم کے حرج سے پریشان والدین کیلئے اچھی خبر ۔۔۔۔۔ وفاقی حکومت نے 15 ستمبر سے ملک بھر کے تعلیمی ادارے کھولنے کا اعلان کردیا۔

وفاقی وزیر برائے تعلیم و پیشہ وارانہ تربیت شفقت محمود نے اسلام آباد میں پریس کانفرنس کے دوران کہا کہ کورونا صورتحال میں تعلیم کا بڑا نقصان ہوا، چاروں صوبوں، آزاد کشمیر، گلگت بلتستان کے حکام سے مشاورت کے بعد تعلیمی ادارے 15 ستمبر سے کھولنے کا فیصلہ کیا گیا ہے، اگست کے پہلے اور پھر تیسرے ہفتے میں اُس وقت کی صورتحال کو دیکھتے ہوئے فیصلے پر نظر ثانی کی جائے گی۔

اپنی بات جاری رکھتے ہوئے شفقت محمود کا کہنا تھا کہ ستمبر کے پہلے ہفتے میں دوبارہ صحت کے انڈیکیٹرز کو مد نظر رکھا جائے گا، معاملات ٹھیک ہوجانے پر 15 ستمبر سے تدریسی عمل کا آغاز کر دیا جائے گا، اس حوالے سے مختلف تعلیمی اداروں کو انتظامی دفاتر پہلے کھولنے کی اجازت دینے کا فیصلہ ہوا ہے۔

Activity - Insert animated GIF to HTML

انہوں نے مزید بتایا کہ عید الاضحیٰ کے بعد یا اگست کے آغاز میں اسکول، کالجز، یونیورسٹیز کو اساتذہ اور عملے کو بلانے کی اجازت ہوگی اور حفاظتی انتظامات یا ایس او پیز کی پریکٹس کی جا سکے گی۔ اس حوالے سے کسی تاریخ یا وقت کے تعین کا اختیار صوبوں کے پاس ہے۔

شفقت محمود کا کہنا تھا کہ 13 مارچ کے بعد امتحانات روک دیے گئے تھے تاہم اب جو ادارے امتحانات لینا چاہتے ہیں وہ جولائی کے دوسرے ہفتے سے ایسا کر سکتے ہیں۔ یونیورسٹیوں میں داخلوں کے لیے ہونے والے امتحانات کو دو روز پر محیط کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔

اپنی بات جاری رکھتے ہوئے وفاقی وزیر برائے تعلیم و پیشہ وارانہ تربیت نے کہا کہ امتحانات کھلے میدان میں ہوں گے، طلبہ کا درمیانی فاصلہ 6 فٹ ہو گا۔امتحانات کی نگرانی کی جائے گی، ایس او پیز پر عمل نہ ہونے پر امتحان کو روک دیا جائے گا۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.