ملکی مفاد کی قانون سازی کے بدلے بلیک ملینگ سے این آر او نہیں دے سکتے، وزیرعظم

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان نے واضح کیا ہے کہ اپوزیشن کو ملکی مفاد کی قانون سازی کے بدلے این آر او نہیں دے سکتے۔

وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت تحریک انصاف کی پارلیمانی پارٹی کا اجلاس اسلام آباد میں ہوا۔ جس میں وزیراعظم نے حکومتی ارکان کو پارلیمنٹ میں ہونے والی قانون سازی کی اہمیت سے آگاہ کیا۔ پارلیمانی پارٹی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ایف اے ٹی ایف سے متعلق قانون سازی پاکستان کےلئے ضروری ہے، ماضی کی خرابیوں کو درست کررہے ہیں۔

اپنی بات جاری رکھتے ہوئے عمران خان کا کہنا تھا کہ اپوزیشن نے شروع سے ہر قانون سازی میں رکاوٹ ڈالنے کی کوشش کی، وہ اپنی سیاست بچانے کے لیے پارلیمنٹ کا فورم استعمال کررہی ہے، حالانکہ اسے قومی مفاد میں ہونے والی قانون سازی میں حمایت کرنی چاہیے۔

Activity - Insert animated GIF to HTML

وزیراعظم نے خبردار کیا کہ اپوزیشن نے ملکی مفاد کو ذاتی مفاد پر نہ ترجیح دی تو بے نقاب ہونگے، ملکی مفاد میں ہونے والی قانون سازی کے بدلے  اپوزیشن کو این آر او نہیں دے سکتے، عوامی نمائندے پارلیمنٹ میں ہونے والی قانون سازی میں فعال کردار ادا کریں۔

وزیراعظم نے کہا کہ اپوزیشن کی پوری کوشش اس بات پر ہے کہ کیسز ختم ہو جائیں، لیکن ہم اپوزیشن کی کسی بلیک میلنگ میں نہیں آئیں گے اور پی ٹی آئی اپنے منشور سے کسی صورت پیچھے نہیں ہٹے گی،کیونکہ اگر ہم اپنے منشور سے پیچھے ہٹے تو تباہی ہوگی۔

Comments are closed.