سینئرحریت رہنماء مسرت عالم بٹ کُل جماعتی حریت کانفرنس کے چیئرمین مقرر

غیرقانونی طور پر بھارت کے زیرقبضہ جموں و کشمیر میں کُل جماعتی حریت کانفرنس کا ایک غیرمعمولی اجلاس سرینگر میں ہوا، جس میں سینئرحریت رہنماء مسرت عالم بٹ کو حریت کانفرنس کا چیئرمین مقرر کیا گیا۔

کل جماعتی حریت کانفرنس کے ترجمان نے سرینگر سے جاری ایک بیان میں کہا ہے کہ اجلاس میں بابائے حریت سیدعلی گیلانی کی وفات پر حریت قائدین نے گہرے رنج و غم کااظہار کیا۔ انہوں نے کہاکہ ان کی وفات سے جو خلا پیدا ہو گیا ہے اس کو پُر کرنا مشکل ہے تاہم بابائے حریت کے مشن کو پایہ تکمیل تک پہنچانے کیلئے ہر ممکن جدوجہد جاری رکھیں گے۔

اجلاس میں تفصیلی تبادلہ خیال کے بعد اس بات کو محسوس کیاگیا کہ بابائے حریت کی وفات کے بعد حریت کانفرنس کے چیئرمین کا عہدہ خالی ہے اور اس کو پر کرنا وقت کی اہم ضرورت ہے تمام حریت قائدین نے اتفاق رائے سے فیصلہ کیاکہ سینئر حریت رہنماء مسرت عالم بٹ کو حریت کانفرنس کا چیئرمین، شبیر احمد شاہ اور غلام احمد گلزار کو وائس چیئرمین اور مولوی بشیر احمد عرفانی بدستور جنرل سیکریٹری ہوں گے اور دیگر کمیٹیوں کے ذمہ داران بھی اپنی جگہ بدستور کام کرتے رہیں گے۔

حریت ترجمان نے کہاکہ یہ فیصلہ حریت کانفرنس کو مزید متحرک اور فعال بنانے کیلئے کیا گیا ہے اور مستقبل میں حالات میں بہتری کے بعد باضابطہ طورپر حریت کانفرنس کے آئین کے مطابق الیکشن کے ذریعے تمام ذمہ داروں کو انتخاب کیاجائے گا۔ اس موقع پر اپنی حق پر مبنی جدوجہد آزادی کو اس کے منطقی انجام تک پہنچانے اور اس سلسلے میں کسی بھی قربانی سے دریغ نہ کرنے کے کشمیریوں کے عزم کا اعادہ بھی کیاگیا۔

Comments are closed.