پاکستان اور روس کا دفاع اور اقتصادی شعبوں میں تعاون بڑھانے پراتفاق

 اسلام آباد:روسی وزیر خارجہ کا دورہ پاکستان ۔۔ وزیر اعظم عمران خان ،آرمی چیف اور جنرل قمر جاوید باجوہ  سے الگ الگ ملاقات کی ۔ وزیراعظم عمران خان نے روسی صدر پیوٹن کو دورہ پاکستان کی بھی دعوت دے دی ۔ آرمی چیف نے کہاکہ پاکستان کے کسی ملک کے خلاف جارہانہ عزائم نہیں۔ پاکستان اور روس نے سیکیورٹی اور دفاع کے شعبوں میں باہمی اقتصادی تعاون بڑھانے اور گیس پائپ لائن کے جلد آغازپر اتفاق کرلیا۔

وزیر اعظم عمران خان نے روسی وزیر خارجہ کو سپوتنک ویکسین بنانے پر مبارکباد دی اور پاکستان کی جانب سے ویکسین کی خریداری میں دلچسپی بھی ظاہر کی۔ملاقات میں پاک روس دوطرفہ تعلقات اور علاقائی امور پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔ وزیراعظم نے دوطرفہ تعلقات پر اطمینان کا اظہارکرتے ہوئے کہاکہ "پاکستان اسٹریم” گیس پائپ لائن منصوبے پرجلد از جلد کام شروع کرنے کے عزم کا اعادہ کیا۔وزیراعظم نے افغانستان تنازعہ کے سیاسی حل کی اہمیت پر زور دیا، جبکہ افغان امن عمل کو فروغ دینے میں روس کی کوششوں کو سراہا۔وزیراعظم نے مقبوضہ کشمیر کے حوالے سے پاکستانی موقف سے بھی آگاہ کیا۔دونوں رہنماوں مسلہ کشمیر کے پرامن حل کی ضرورت پر زوردیا جبکہ مشرق وسطی سمیت خطے کی صورتحال پر بھی تبادلہ خیال کیا۔۔

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے روسی وزیرخارجہ کی ملاقات میں سیکیورٹی ، دفاع کے شعبوں میں تعاون اور افغان امن عمل پر بات چیت کی گئی۔ روسی وزیر خارجہ نے کہاکہ روس ، پاکستان کے ساتھ اپنے تعلقات کو انتہائی اہمیت دیتا ہے، مختلف شعبوں میں دونوں ملکوں کے تعلقات مثبت انداز میں آگے بڑھ رہے ہیں، اس موقع پرآرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہاکہ دونوں ممالک کی مسلح افواج کے درمیان تعاون بڑھانا چاہتے ہیں،پاکستان افغانستان اور خطے میں امن کے لئے ہر کوشش کا خیرمقدم کرتا ہے۔ پاکستان کے کسی بھی ملک کے خلاف کوئی جارحانہ عزائم نہیں،باہمی ترقی، خود مختاری اوربرابری کی بنیاد پر خطے میں بہتری کے لئے کام کرتے رہیں گے۔

Comments are closed.